کینیڈا

کینیڈا میں 1991 کے بعد سالانہ افراط زر کی شرح 4.8 فیصد تک پہنچ گئ

شماریات کینیڈا کا کہنا ہے کہ دسمبر میں افراط زر کی سالانہ رفتار 1991 کے بعد اپنی بلند ترین شرح پر پہنچ گئی۔

ایجنسی کا کہنا ہے کہ دسمبر میں کنزیومر پرائس انڈیکس ایک سال پہلے کے مقابلے میں 4.8 فیصد زیادہ تھا۔

نومبر میں سال بہ سال 4.7 فیصد اضافے کے مقابلے میں یہ مطالعہ کیا گیا۔

دسمبر میں قیمتوں میں اضافے کی ٔوجہ خوراک، مسافر گاڑیوں اور مکانات کی سال بہ سال زیادہ قیمتیں تھیں۔

شماریات کینیڈا کا کہنا ہے کہ گیسولین کی قیمتوں کے علاوہ دسمبر میں کنزیومر پرائس انڈیکس چار فیصد تک بڑھ گیا۔

دسمبر میں گیس پمپس پر قیمتوں میں سال بہ سال 33.3 فیصد اضافہ ہوا جبکہ نومبر میں 43.6 فیصد سالانہ اضافہ ہوا تھا کیونکہ اومائیکرون ویرینٹ سے متعلق صحت عامہ کی پابندیوں کو سخت کرنا طلب پر تولا گیا تھا۔

انہوں نے ایک نوٹ میں لکھا ہے کہ توانائی کی بڑھتی ہوئی قیمتوں، خوراک کی لاگت کو متاثر کرنے والے سپلائی چین کے مسائل اور گھروں کی قیمتوں میں اضافے سے پتہ چلتا ہے کہ موسم بہارتک افراط زر میں مسلسل اضافہ جاری رہ سکتا ہے۔

بینک آف کینیڈا نے کہا ہے کہ وہ بڑھتی ہوئی افراط زر کو روکنے کے لیے کام کرے گا اور اگلے ہفتے شرح سود کا اعلان متوقع ہے۔

بنیادی افراط زر کے لئے تین اقدامات کا اوسط، جو قیمتوں کے بنیادی دباؤ کا بہتر پیمانہ سمجھا جاتا ہے اور بینک آف کینیڈا کی طرف سے قریب سے ٹریک کیا جاتا ہے، دسمبر کے لئے 2.93 فیصد تھا جبکہ نومبر میں 2.73 فیصد تھا۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
adana eskort - eskort adana - mersin eskort - eskort mersin - eskort - adana eskort bayan - eskort bayan adana - mersin eskort bayan