کینیڈا

ہفتے میں چار دن کام’: کیلگری میں نیا تجربہ

کیلگری چیمبر آف کامرس کے صدر کے مطابق، چار روزہ کام کا ہفتہ ایک دلچسپ تصور ہے جس سے آجروں کو آگاہ ہونا چاہئے.

برطانیہ میں ہونے والی ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ چار دن کام کرنے والے ہفتے کے چھ ماہ کے تجربے سے افرادی قوت میں تناؤ اور بیماری میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔

کیلگری کے ہیومن ریسورس کنسلٹنٹ ایشی کیبوم کا کہنا ہے کہ چار دن کا کام کا ہفتہ کام کے ارتقا کی جانب صرف اگلا قدم ہے۔

"دنیا بدل گئی ہے. وینڈی ایلن انکارپوریٹڈ کے کنسلٹنٹ کیبوم نے کہا کہ ہم پہلے سے کہیں مختلف دنیا میں رہ رہے ہیں۔

"لوگ زیادہ تیز اور زیادہ موثر ہیں. نئی نسلیں اتنی ٹیکنالوجی کے ساتھ آ رہی ہیں۔ اب ہم شاید سیکنڈ یا منٹ میں وہ کام کر سکتے ہیں جو ہفتوں میں ہوتا تھا۔

لوگوں کو کام کی اتنی ہی رقم ادا کی گئی تھی لیکن برطانیہ کے مطالعے میں وہ اپنے کام کو چار دنوں میں محدود کرنے میں کامیاب رہے۔

کیبوم نے کہا کہ ان کا خیال ہے کہ اگر ضرورت پڑی تو لوگ ہفتے میں چار دن کام کرنے میں زیادہ تر اتنی ہی رقم حاصل کر سکتے ہیں۔

کیلگری چیمبر آف کامرس کی صدر ڈیبورا یڈلن نے کہا کہ "یہ دلچسپ ہے اور مجھے حیرت ہوگی اگر ہم کیلگری میں اس کے بارے میں مزید نہ سنیں۔
چار روزہ ہفتہ ابھی تک کیلگری میں عام نہیں ہے.

مطالعے میں یہ بھی دیکھا گیا کہ آزمائشی مدت کے دوران کمپنیوں کی آمدنی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔

ٹرائل میں حصہ لینے والی 61 کمپنیوں میں سے 56 نے کہا کہ وہ ہفتے میں چار دن کام کر رہی ہیں۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button