کمیونٹی نیوزکینیڈا

عدالت ‘سی آر اے’ کے جرمانے کو معطل کرے، مسلم خیراتی ادارے کا عدالت سے مطالبہ

مسلم خیراتی ادارے ‘ایچ سی آئی‘ نے عدالت سے وفاقی (سی آر اے) معطلی منجمد کرنے کا مطالبہ کر کیا ہے کیونکہ اس معطلی پر اسے جرمانے کے ساتھ ساتھ ٹیکس وصولیاں جاری کرنے سے بھی منع کیا گیا ہے۔

ایچ سی آئی (ہیومن کنسرن انٹرنیشنل) کا کہنا ہے کہ گزشتہ ماہ عائد کی گئی ایک سال کی معطلی تنظیم اور ہزاروں مستفیدین کو "ناقابل تلافی نقصان” پہنچائے گی۔

کینیڈا ریونیو ایجنسی نے خیراتی ڈائریکٹوریٹ کے آڈٹ کے بعد ایچ سی آئی کے چھ اقدامات کے بارے میں خدشات کی نشاندہی کی تھی اور ساتھ ہی جرمانہ بھی عائد کیا تھا۔

سی آر اے نے چیرٹی پر الزام لگایا تھا کہ اس نے چھ منصوبوں کا انتظام کرنے والی تنظیموں کی جانب سے 307,000 امریکی ڈالر سے زائد کی عطیات کی رسیدوں کو نامناسب طریقے سے جاری کیا ہے- یہ ایک ایسا عمل ہے جسے فریق ثالث کی وصولی کے نام سے جانا جاتا ہے۔

ان اقدامات میں بھارت میں تعلیم اور صحت کے تین منصوبے، بنگلہ دیش میں یتیم بچوں کی تعلیم اور ہنر مندی کی ترقی، صومالیہ میں یتیموں کی مدد اور کینیا میں ایک تعلیمی منصوبہ شامل تھے۔

مسلم خیراتی ادارے ایچ سی آئی کا کہنا ہے کہ کینیڈا کے خیراتی ادارے اکثر ان کمیونٹیز سے منسلک افراد اور گروپوں کے ساتھ کام کرتے ہیں جہاں منصوبے پر کام ہورہا ہو، ساتھ ہی اصرار کیا کہ وہ ہمیشہ اپنے بیرون ملک منصوبوں کی سمت اور کنٹرول برقرار رکھنے اور اس بات کو یقینی بنانے کے لئے پرعزم رہی ہے کہ فریق ثالث کے ذریعے کیے جانے والے اس طرح کے تمام منصوبے ایچ سی آئی کی اپنی خیراتی سرگرمیاں ہوں۔

ایچ سی آئی کو 7 جولائی کو لکھے گئے خط میں ریونیو ایجنسی نے چیرٹی کی تشریح سے اختلاف کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس دعوے کو قبول کرنے سے قاصر ہے کہ چھ غیر رجسٹرڈ تنظیمیں ایچ سی آئی کی جانب سے اور اس کے فائدے کے لئے تیسرے فریق کے فنڈ ریزرز ہیں۔ اس کے نتیجے میں ایک سال کی معطلی 13 جولائی 2022 تک نافذ العمل ہے۔

ایچ سی آئی نے وفاقی ٹیکس عدالت کو درخواست دی تھی کہ جب تک اعتراض سے نمٹا نہیں جاتا معطلی کے اطلاق میں تاخیر کی جائے۔

اگست کے شروع میں وفاقی ٹیکس عدالت کے جج نے معطلی پر ‘اسٹے’ کی فراہمی کے خلاف فیصلہ دیا تھا۔

‘ایچ سی آئی’ اب ‘وفاقی عدالت براۓ اپیل’ میں جج کے ‘اسٹے’ جاری نہ کرنے کے فیصلے کو چیلنج کرے گی کیونکہ ایچ سی آئی کے مطابق جج سزا سے قبل ایچ سی آئی کو مقدمے کا حق نہ دینے میں قدرتی انصاف اور طریقہ کار کی انصاف پسندی کے اصول پر عمل کرنے میں ناکام رہا ہے۔

تقریبا 100 مسلم تنظیموں اور سول سوسائٹی گروپوں نے گزشتہ مہینے جولائی میں وزیراعظم جسٹن ٹروڈو کو ایک خط بھیجا تھا جس میں ان سے کینیڈا ریونیو ایجنسی کے آڈٹ کے طریقوں میں اصلاحات لانے کا مطالبہ کیا گیا تھا اور الزام لگایا گیا تھا کہ سی آر انے غیر منصفانہ طور پر مسلم خیراتی اداروں کو نشانہ بناتی ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button