کینیڈا

کینیڈا کے تقریبا نصف کرایہ دار غیر معینہ مدت تک کرایہ پرگھر لیتے رہیں گے: سروے

ایک نئے سروے میں کہا گیا ہے کہ کرایہ پر لینے والے تقریبا نصف کینیڈین غیر معینہ مدت تک کام جاری رکھنے کی توقع رکھتے ہیں اور انہیں یقین نہیں ہے کہ وہ ہاؤسنگ مارکیٹ میں کب داخل ہو سکیں گے۔

انشورنس فرم کینیڈا لائف کے سروے میں کرایہ داروں نے نقد رقم، خوف اور غیر یقینی صورتحال کی کمی کو سائیڈ لائن پر رہنے کی وجوہات قرار دیا، تقریبا 73 فیصد کا کہنا ہے کہ گھر خریدنے کا یہ برا وقت ہے اور 17 فیصد کا کہنا ہے کہ وہ کبھی نہیں خریدیں گے۔

سروے میں شامل اکیانوے فیصد کرایہ داروں کا خیال ہے کہ ہر سال گھر خریدنا مشکل ہوتا جا رہا ہے اور 89 فیصد توقع کرتے ہیں کہ اگلی نسل کو ہاؤسنگ مارکیٹ میں آنے میں مزید مشکل وقت آئے گا۔

اگرچہ 79 فیصد جواب دہندگان کا خیال ہے کہ گھر کی ملکیت ایک اچھی سرمایہ کاری ہے، 64 فیصد کو نہیں لگتا کہ وہ اس وقت تک گھر خرید سکیں گے جب تک کہ انہیں خاندان کے افراد جیسے دوسروں کی مالی مدد حاصل نہ ہو۔

5 مئی سے 11 مئی کے درمیان کیے گئے سروے میں یہ بھی پتہ چلا ہے کہ 25 سے 29 سال کے درمیان کینیڈین 30 سے 49 سال کی عمر کے افراد کے مقابلے میں غیر معینہ مدت تک کرایہ پر لینے کا امکان دو گنا زیادہ ہیں۔

تاہم کینیڈین رئیل اسٹیٹ ایسوسی ایشن (سی آر ای اے) کے حالیہ اعداد و شمار کے مطابق ہاؤسنگ مارکیٹ میں ٹھنڈک کے آثار نظر آرہے ہیں تاہم مئی میں گھروں کی فروخت میں گزشتہ سال کے مقابلے میں تقریبا 22 فیصد اور اپریل سے مئی کے درمیان تقریبا نو فیصد کمی واقع ہوئی ہے۔ مئی میں ملک بھر میں اوسط، غیر موسمی طور پر ایڈجسٹ شدہ قیمت 711,000 ڈالر تھی جو اپریل کے مقابلے میں تقریبا پانچ فیصد کم ہے۔

کینیڈا لائف میں انفرادی کسٹمر کے ایگزیکٹو نائب صدر پال اورلینڈر نے کہا کہ لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ کرایہ دار گھر خریدنے کی صلاحیت پر زیادہ اعتماد محسوس کر رہے ہیں کیونکہ کنٹرول سے باہر افراط زر اور بڑھتی ہوئی شرح سود فنڈز کی دستیابی پر اثر انداز ہوتی ہے۔

انہوں نے ایک انٹرویو میں کہا کہ ان عوامل سے ممکنہ طور پر کینیڈین گھر کی ملکیت کو تیزی سے چیلنج کرتے نظر آتے ہوں گے۔

موجودہ گھر مالکان بھی دباؤ محسوس کر رہے ہیں، سروے میں شامل 24 فیصد افراد کا کہنا ہے کہ وہ گھر کو غریب محسوس کرتے ہیں۔

بینک آف کینیڈا کی جانب سے شرح سود میں اضافہ جاری ہے، گھر کے مالکان کو اس سے بھی زیادہ تکلیف کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے کیونکہ رہن کی ادائیگیاں زیادہ بڑھ رہی ہیں۔

مرکزی بینک، جو 13 جولائی کو شرح سود کا اگلا فیصلہ کرنے والا ہے، نے اشارہ دیا ہے کہ اگر ضرورت پڑی تو وہ بڑے اضافے کے لئے کھلا ہے۔ دریں اثنا شماریات کینیڈا کے مطابق مئی میں کینیڈا میں افراط زر کی شرح 7.7 فیصد تک پہنچ گئی۔

اس سے قطع نظر کہ کینیڈین گھر کی ملکیت کے ارد گرد کیا فیصلہ کرتے ہیں، دولت کی تعمیر اور ریٹائرمنٹ کے منصوبے متاثر ہوں گے۔

اورلینڈر نے کہا کہ خریداری سے ایکویٹی بنتی ہے جو طویل مدتی قیمتی ہوسکتی ہے، گھر کی ملکیت اور گھر کی دیکھ بھال کی لاگت دراصل کینیڈین ز کی ریٹائرمنٹ کے لئے بچت کرنے کی صلاحیت کو بے گھر کر سکتی ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دوسری جانب کرایہ پر لینے سے مزید لچک مل سکتی ہے اور ہر ماہ بچت اور سرمایہ کاری کے لئے مفت نقد بہاؤ محفوظ رہ سکتا ہے جو ریٹائرمنٹ کی طرف جا سکتا ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button
adana eskort - eskort adana - mersin eskort - eskort mersin - eskort - adana eskort bayan - eskort bayan adana - mersin eskort bayan