کینیڈا

فروری میں گروسری کی قیمتوں میں 10.6 فیصد اضافہ

شماریات کینیڈاکا کہنا ہے کہ فروری میں افراط زر5.2فیصد تک کم ہو ئی لیکن کینیڈین گروسری اسٹورز پر قیمتوں میں نما یاں اضافہ ہوا.

ایجنسی نے منگل کو جاری کردہ اپنی تازہ ترین کنزیومر پرائس انڈیکس رپورٹ میں کہا کہ گروسری اسٹور سے خریدے گئے کھانے کی قیمت میں گزشتہ ماہ سال بہ سال 10.6 فیصد اضافہ ہوا۔ یہ جنوری میں 11.4 فیصد سالانہ اضافے سے کم ہے۔

ایجنسی کے مطابق، گیس کی قیمتوں میں کمی کی وجہ سے معیشت تھوڑابہتر ہوئی ، حالانکہ اس نے نوٹ کیا کہ سالانہ کمی جزوی طور پر فروری 2022 میں یوکرین پر روس کے حملے کے دوران نمایاں اضافے کی وجہ سے ہے۔

اس کے برعکس، رہن کی لاگت کے اشاریہ میں سال بہ سال اضافہ 23.9 فیصد رہا، جو 1982 کے بعد سب سے تیز رفتار ہے۔

مرکزی بینک نے معیشت کو صحیح ڈگرپر رکھنے کی کوشش میں اپنی پالیسی ریٹ میں تیزی سے اضافہ کیا تھا اور توسیع کے ذریعے قیمتوں میں اضافے کی رفتار کو سست کرکے اپنے دو فیصد افراط زر کے ہدف تک پہنچا دیا تھا۔

لیکن بینک آف کینیڈا نے رواں ماہ کے اوائل میں شرح سود کے اہم ہدف کو 4.5 فیصد پر برقرار رکھا، یہ پہلا موقع ہے جب اس نے گزشتہ سال شرح سود میں اضافہ شروع کرنے کے بعد سے اس میں اضافہ نہیں کیا۔ بینک کا تعطل اس کی پیش گوئی کے مطابق افراط زر کی سست روی سے مشروط ہے، جس سے 2023 کے وسط تک قیمتوں کا دباؤ کم ہو کر سالانہ افراط زر کی شرح تین فیصد تک پہنچ جائے گی۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button