کینیڈا

اپنے خاندان کے بارے میں گالی گلوچ برداشت نہیں کروں گا۔ ٹروڈو

لبرل لیڈر جسٹن ٹروڈو کا کہنا ہے کہ پیر کے روز انکی اہلیہ کے لئے جنسی اصطلاح استعمال کرنے والے مظاہرین نے ریڈ لائن عبور کی جس پر انہیں جواب دینے پر مجبور ہونا پڑا۔

انہوں نے منگل کے روز رچمنڈ، بی .سی میں سوالات اٹھاتے ہوئے کہا کہ میرے خیال میں کینیڈین جانتے ہیں کہ میں تنقید برداشت کر سکتا ہوں اور میں ہر طرح کی بد سلوکی اور گالم گلوچ کو برداشت کر چکا ہوں۔

"لیکن وہ شخص میرے خاندان کے لئے برے الفاظ استعمال کرنے پر اتر آیا. انہوں نے میری بیوی کے بارے میں نفرت انگیز اور غلط فہمی پر مبنی باتیں کیں۔ "

ٹروڈو سے پوچھا گیا تھا کہ کیا اپنا ماسک نیچے کھینچ کر مظاہرین پر چیخنا مناسب ہے۔

جسٹن ٹروڈو نے کہا کہ”میں نے اس کے لئے سائن اپ کیا۔ انہوں نے کہا کہ میرا خاندان اس بات پر گہرا یقین رکھتا ہے کہ میں کیا کر رہا ہوں اور بہت کچھ برداشت کر رہا ہوں لیکن ہر ایک کی حدود ہیں اور جب کوئی ان حدود کو عبور کرے گا تو میں ہمیشہ واپس جواب د وں گا اورایسا کرنے والوں کو پیچھے دھکیلدوں گا۔

مظاہرین کے ساتھ تلخ کلامی اس وقت ہوئی جب ٹروڈو اپنے برنابی، بی .سی اسٹوڈیو کے باہر گلوبل نیوز کے ساتھ انٹرویو کے منتظر تھے۔

ان کی اہلیہ سوفی گریگوئر ٹروڈو موجود نہیں تھے۔

گلوبل نیوز کی جانب سے فلمائی گئی اس فوٹیج میں دکھایا گیا ہے کہ مظاہرین پارکنگ کے دوسری طرف کھڑے ہو کر توہین کا آغاز کر رہے ہیں اور قائد سے مطالبہ کر رہے ہیں کہ وہ ان سے لڑیں کیونکہ اسپیکر کے ذریعے بینڈ ٹوئسٹر سسٹر کا گانا "ہم اسے نہیں لے رہے ہیں”چلایا جا رہا تھا۔

رہنما اپنے جواب میں ملک بھر کے متعدد اسپتالوں میں پیر کے روز ہونے والے ویکسینشن کے خلاف مظاہروں کا ذکر کر رہے تھے۔ اسپتال کے عملے نے مریضوں اور ان کے ساتھیوں کے خلاف ہراساں کرنے کے واقعات بیان کیے ہیں۔

گزشتہ کئی ہفتوں کے دوران ٹروڈو کو اپنی انتخابی مہم کی تقریبات میں احتجاج کا سامنا کرنا پڑا ہے جو بعض اوقات پرتشدد ہو چکے ہیں۔

منگل کی صبح این ڈی پی کے رہنما جگمیت سنگھ نے کہا کہ ٹروڈو کو اسپتالوں میں ہونے والے مظاہروں کے بارے میں مذاق نہیں کرنا چاہئے تھا اور کہا کہ ہیکلنگ کسی بھی مہم کا حصہ ہے۔

"اسے اس بارے میں مذاق نہیں کرنا چاہئے تھا کیونکہ یہ خطرناک ہے اور یہ واقعی بہت سے لوگوں کے لئے مسائل کا سبب بن رہا ہے۔ ہم جانتے ہیں کہ ہمارے ہیلتھ کئیر ورکرز دن رات کام کر رہے ہیں اور وہ واقعی مشکل وقت سے گزر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ مذاق کرنے کی چیز نہیں ہے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button